برطانیہ کے شہر لوٹن میں یو کے کوٹلی فاؤنڈیشن کی جانب سے لوٹن بارو کونسل کے تعاون سے ایک لائف سیونگ ایونٹ کا انعقاد

لوٹن برطانیہ (تیمور لون) برطانیہ کے شہر لوٹن میں یو کے کوٹلی فاؤنڈیشن کی جانب سے لوٹن بارو کونسل کے تعاون سے ایک لائف سیونگ ایونٹ کا انعقاد۔ فوری طبی امداد کے زریعے کسی انسانی جان کو کس طرح بچایا جا سکتا ہے سے متعلق لوگوں کو ٹریننگ دی گئی اس دوران مقامی کمیونٹی کے لیے ایک ورکشاپ کا انعقاد بھی کیا گیا ۔ نو منتخب میئرس لوٹن بارو کونسل محترمہ مسز نسیم ایوب نے بطور مہمان خصوصی شرکت ۔ کمیونٹی کے لئے نمایاں خدمات سرنجام دینے والی شخصیات میں ایوارڈ کی تقسیم۔ تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے شہر لوٹن میں یو کے کوٹلی فاؤنڈیشن کی جانب سے فاونڈیشن کے آرگنائزرز میں شامل ڈاکٹر طاہر لون ، ڈاکٹر خوابہ گل زمان بٹ ، عمیر امجد راٹھور ، عقیل کیا تقلین بٹ اور غلام عباس نے لوٹن بارو کونسل کے تعاون ایک تقریب کا انعقاد گیا جس کا مقصد مقامی کمیونٹی میں لائف سیونگ سے متعلق معلومات دینا اور کسی بھی انسانی جان کو بچانے کے لئے ابتدائی طبی امداد کی ٹریننگ دینا تھی۔

تقریب کے دوران ڈاکٹر طاہر محمود اور لوٹن اینڈ ڈنسٹیبل ہاسپٹل سے ڈاکٹر گل زمان بٹ اور ڈاکٹر امیر ریائی نے اس ٹریننگ کی اہمیت اور غرض و غایت کے بارے میں لوگوں کو آگاہ کیا ۔ لندن ایمبولینس ، لوٹن ایمبولینس سروس اور فائر برگیڈ کے عملہ نے بھی ایونٹ میں حصہ لیتے ہوئے کمیونٹی کو لائف سیونگ سے متعلق نہ صرف بنیادی معلومات فراہم کیں بلکہ لوگوں کو ابتدائ طبی امداد کی ٹریننگ بھی دی جس میں موجود بزرگوں بچوں اور خواتین کی بڑی تعداد نے عملی طور پر حصہ لیا۔ ورکشاپ میں شریک لوگوں کا کہنا تھا کہ اس قسم کی ٹریننگز عام لوگوں کے لیے انتہائ ضروری ہیں کیونکہ کسی بھی قسم کے حادثہ خاص طور پر ہارٹ اٹیک کی صورت میں ایمبولینس سروسز کے پہنچنے تک ہر لمحہ قیمتی ہوتا ھے اور اس ٹریننگ سے مستفید افراد کسی کی جان بچانے کا باعث بن سکتے ہیں۔

میئرس لوٹن محترمہ نسیم ایوب نے یو کے کوٹلی کی کاوشوں کو خوب سرہتےہوئے کہا کہ یہ ہمارے لئے بڑی خوش قسمتی کی بات ہے کہ ہمارے درمیاں ملک کے مایہ ناز ڈاکٹرز اور والنٹیئرز کی ایک ایسی فعال ٹیم موجود ہے جو لوگوں کو آگاہی مہم پر مبنی پروگرامز کے ذریعے ان کی مدد کر رہی ہے۔

ڈاکٹر طاہر لون نے کہا کہ ہماری پاکستانی و کشمیری کمیونٹیز کے لیے یہ ٹریننگ نہایت ضروری ہے۔ کیونکہ ہارٹ اٹیک کی شرح باقی کمیونٹیز کی نسبت ہماری کمیونٹی میں بہت زیادہ ہے۔

ڈاکٹر خواجہ گل زمان بٹ اور ڈکٹر امیر ریائی کا کہنا تھا کہ شعبہ ایکسیڈنٹ اور ایمرجنسی میں کام کرنے کے دوران انکا واسطہ اس قسم کے حادثات سے بہت زیادہ پڑتا رہتا ہے۔ انھوں نےبتایا کہ گزشتہ سال چار جانیں صرف اور صرف فوری ابتدائ طبی امداد نہ ملنے کی وجہ ضائع ھو گیئں تھیں۔ ان حادثات کے پیش نظر انکا کہنا تھا کہ ہر انسان کو بنیادی لائف سیونگ ٹریننگ لینی چاہئے۔

تقریب کے اختتام پر یوکے کوٹلی فاونڈیشن کی طرف کمیونٹی کی بہتر خدمات کے صلے میں چوہدری ایوب سابق مئیر لوٹن بارو کُونسل، چوہدری فاروق رولوی اور دیگر افراد کُو ایوارڈ سے نوازا گیا ۔ ڈاکٹر طاہر لون ، ڈاکٹر خوابہ گل زمان بٹ ، عمیر امجد راٹھور ، عقیل تقلین بٹ اور غلام عباس نے یو کے کوٹلی فاؤنڈیشن کی ٹیم اور والنٹیرز کی خدمات کو سراہتے ہوئے انکا شکریہ ادا کیا۔

UK Kotli Foundation

UK Kotli Foundation