طالبان نے امریکی تربیت یافتہ کمانڈوز ہلاک کر دیے

Commandos

Commandos

بادغیس (جیوڈیسک) افغانستان میں طالبان نے 34 کمانڈوز کو ہلاک کر دیا ہے۔ حکام نے آج جمعرات 18 جولائی کو بتایا کہ یہ واقعہ منگل کی شب مغربی صوبے بادغیس میں پیش آیا۔

صوبہ بادغیس کے ایک ضلع اب کماری کے سربراہ خدا داد خان نے خبر رساں اداروں کو بتایا کہ ان دستوں کو اس ضلعے میں طالبان کے خلاف ایک خصوصی کارروائی کے لیے روانہ کیا گیا تھا تاہم گھات لگائے عسکریت پسندوں نے راستے میں ہی ان کمانڈوز کو نشانہ بنا دیا۔

صوبائی کونسل کے صدر بہاالدین قدسی نے آج جمعرات کی صبح بتایا کہ مقامی آبادی نے خصوصی دستوں کے ہلاک ہونے والے کمانڈوز کی لاشیں صوبے کے سب سے بڑے شہر بالا مرغاب پہنچا دی گئی ہیں۔ قدسی کے بقول قتل کرنے سے قبل کم از کم گیارہ افراد کو طالبان نے یرغمال بنایا تھا۔

افغان کمانڈوز کو امریکی دستوں کی جانب سے تربیت دی گئی ہے۔ انہیں انسداد دہشت گردی کے بہترین تربیت یافتہ دستے قرار دیا جاتا ہے اور ساتھ ہی ان کمانڈوز کو جدید ترین اسلحہ بھی فراہم کیا گیا ہے۔

اسی دوران افغان فوج کے ایک بریگیڈیئر کمانڈر کو جنوب مشرقی صوبے غزنی کے قرہ باغ ضلعے میں ہلاک کر دیا گیا ہے۔ حکام نے بتایا کہ طالبان کے اس حملے میں فوجی افسر کا محافظ زخمی ہوا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ عسکری تنصیب پر موجود ایک فوجیوں کی جوابی کارروائی میں حملہ آور بھی مارے گئے۔ مقامی انتظامیہ کے دفاتر کے علاوہ ضلع قرہ باغ کے زیادہ تر حصہ طالبان کے زیر اثر ہے۔