اورسئیز پاکستانی کرسچن آلائینس کی دوسری بین الاقوامی کانفرنس پیرس میں نہایت کامیاب رہی

International Conference

International Conference

ایمسٹرڈیم (واٹسن سلیم گل) اورسئیز پاکستانی کرسچن آلائینس کی دوسری بین الاقوامی کانفرنس پیرس میں نہایت کامیاب رہی۔ یورپ اور برطانیہ سے سیاسی، سماجی، مزہبی راہنماؤں نے اس کانفرنس میں بھرپُور شرکت کی۔ کانفرنس کا آغاز آسیہ بی بی کی رہائ کے لئے شکرگزاری کی عبادت سے ہوا۔ یاد رہے کہ اس سلسلے کی پہلی کانفرنس گزشتہ سال ایمسٹرڈیم میں منقد ہوئ تھی۔ اس کانفرنس میں او پی سی اے کا انتظامی ڈھانچہ منتخب کیا گیا سب کی مشاورت اور متفکہ رائے سے اورسیئز پاکستانی کرسچن آلایئنس کے پہلے چیئرمین کے لیے ہالینڈ سے تعلق رکھنے والی معروف سیاسی شخصیت اعجاز میتھیو زواللفقار کو چنا گیا ہے۔

اس کے علاوہ برطانیہ سے سابق ایم پی اے سندھ سٹیفن پیٹر، بیلجیم سے لطیف بھٹی، فرانس سے یقعوب ریاض، جرمن سے ڈیوڈ جان، فرابس سے عمنیول ناز، اور نیدرلینڈ سے واٹسن گل کو بنیادی ڈھانچے کے لیے منتخب کیا گیا۔ اس کمیٹی کو ہر سال انتخابات کے بعد منتخب کیا جائے گا۔ اوراو پی سی اے کا بنیادی مقصد بیرون ملک پاکستان کی مسیحی کمیونٹی کو متحد کرنا ہے۔ ہالینڈ سے پاسٹر ندیم دین، فرانس سے پاسٹر اینجلو اجمل اور جرمن سے پاسٹر شہزاد نے کمیونٹی کے اتحاد کے لئے خصوصی دعا کی۔ اس کے علاوہ منتظمین میں گیسپر ڈانئیل، جمشید ملک، گُلباز فضل، یونس ولئیم، ایشبان جان، ویرن گھرداری، عارف سردار، عظیم مسیح، جگنو کینڈی، بوبی یوسف، سسل جیمس اور واٹسن سلیم گل شامل تھے۔

اس کانفرنس کی میزبانی پنجابی اردو چرچ کے پاسٹر اینجلواجمل، عارف مسیح اور ریاض یقعوب نے کی۔ کانفرنس کے لئے ہال اور تین وقت کے کھانوں کے انتظامات کے لئے کمیونٹی ان کا شکریہ ادا کرتی ہے اور خدمت کے اس جزبے پر ان کو سلام پیش کرتی ہے۔ کانفرنس کے دوران ہی اگلی کانفرنس کے انقعاد کے لئے برطانیہ اور اٹلی سے پیشکش کی گئ جس کے لئے او پی سی اے کی انتظامیہ شکریہ ادا کرتی ہے اور جلد ہی تیسری بین الاقوامی کانفرنس کے انقعاد کے فیصلے کے بعد اس کا اعلان کیا جائے گا۔ امریکا، کینیڈا، آسٹریلیا اور افریقہ تک اس اتحاد کو وسیع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لئے جدوجہد کا آغاز ہوچکا ہے۔