آئرلینڈ اور یورپ کی تاریخ میں کاروباری دنیا کا ایک منفرد نام چوہدری شیر محمد رفیق 87 سال کی عمر میں آئرلینڈ میں وفات پا گئے

Shaer Muhammad Rafique

Shaer Muhammad Rafique

ڈبلن آئرلینڈ (فرخ وسیم بٹ) آئرلینڈ اور یورپ کی تاریخ میں کاروباری دنیا کا ایک منفرد ۔کامیاب بزنس مین اور پرائڈ آف پاکستان کا ایوارڈ حاصل کرنے والے پاکستان فیصل آباد کے چوہدری شیر محمد رفیق گزشتہ دنوں 87 سال کی عمر میں آئرلینڈ کے شہر بیلی ہانس میں دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گے گزشتہ دنوں محمد رفیع کو دل کا عارضہ لاحق ہوا تو انہیں ہسپتال داخل کروا دیا گیا جہاں وہ ایک ہفتے کے بعد اس دنیا فانی سے کوچ کر گے اور اپنے مالک حقیقی سے جا ملے محمد رفیق نے 1973 میں آئر لینڈ کے شہر بیلی ہانس ایک چھوٹی سطح پر 20 ملازمین کے ساتھ گوشت کا کاروبار شروع کیا لیکن چند سالوں میں محمد رفیع کو کاروبار میں خوب ترقی ملی اور ان کی فیکٹری میں ملازمین کی تعداد 450 سے تجاوز کر گئی اس کے بعد محمد رفیق نے 1989میں بڑی محنت اور بہترین حکمت عملی سے اپنے کاروبار کو دنیا بھر میں پھیلا دیا جن میں مغربی اور مشرقی وسطیٰ کے علاوہ ایران ۔مصر ۔سعودی عرب ۔ خلیجی ریاستیں اور جاپان شامل تھے اور آپ کے ملازمین کی تعداد 5000 سے بھی تجاوز کر گئی اور محمد رفیق کا شمار آئرلینڈ کے دوسرے بڑے امیر ترین انسان اور چوتھے بڑے بزنس مین اور دنیا کے 10 بڑے گوشت کے تاجروں میں شمار ہونے لگا اور آپ کی کمپنی کی سالانہ ٹرن اوور ایک ارب پاؤنڈ تک پہنچ گئی اس کے علاوہ محمد رفیق نے یہاں کے سیاسی ۔سماجی اور مذہبی حلقوں میں گراں قدر خدمات پیش کیں جس کی وجہ سے آپ کو تمام حلقوں میں بڑی عزت کی نگاہ سے دیکھا جانے لگا۔

محمد رفیق نے آئرلینڈ میں سب سے پہلے اپنی زمین خرید کر اس پر باقاعدہ پہلی مسجد کی بنیاد رکھی آپ نے سب سے پہلے یہاں ایسوسی ایشن آف پاکستان آئرلینڈ کا آغاز کیا اور باقاعدہ اعلی سطح پر یوم آزادی پاکستان 14اگست کے پروگرامز کا آغاز بھی کیا محمد رفیق نے آئرلینڈ میں پاکستانی سفارت خانہ کے قیام کے لیے ایک کلیدی کردار ادا کیا محمد رفیق کی وفات کی خبر سنتے ہی آئرلینڈ یوکے اور یورپ کے دیگر ممالک سے ہزاروں کی تعداد میں افراد بیلی ہانس پہنچ گئے اور بیلی ہانس مسجد میں نماز جنازہ ادا کی آپ کی نماز جنازہ میں آئرلینڈ کے اعلیٰ عہدوں پر فائز افراد جن میں آئرش پارلیمنٹیرین۔ کونسلرز ۔میئرز اور دیگر کئی سیاسی سماجی اور مذہبی تنظیمات کے قائدین و کارکنان اور ہزاروں کی تعداد میں پاکستانی ۔آئرش اور دیگر کئی کمیونٹیز کے افراد شامل تھے اور ہزاروں افراد کی موجودگی میں آپ کے جنازہ کو قبرستان تک لایا گیا قبرستان کے تمام راستوں کو بند کردیا گیا اور آپ کے جنازہ کو پوری وی آئی پی پروٹوکول اور اعلیٰ اعزاز کے ساتھ قبرستان لایا گیا اور سپرد خاک کیا گیا چوہدری شیر محمد رفیع کے سوگواروں میں ایک بیوہ دو بیٹے عمران شیر رفیق ۔عرفان شیر رفیق بیٹیوں میں انیلہ شیر رفیق اور سما شیر رفیق شامل ہے۔